موٹاپے سے چھٹکارہ پانے کے خواہشمند ہشیار

موٹاپے سے چھٹکارہ پانے کے خواہشمند ہشیار

ایمسٹرڈیم: ایک کہاوت ہے کہ پتلے لوگ خوبصورت ہوتے ہیں مگر موٹے قابل تعریف،موٹاپا انسان کو خود اتنا پریشان نہیں کرتا جتنا دوسرے لوگ کر دیتے ہیں۔

اج کے دور میں تو یہ بات کچھ زیادہ ہی اہم ہو گئی ہے کہ لوگ کیا کہیں گے،اور ان لوگوں کے چکر میں انسان اپنا نقصان کر بیٹھتا ہے۔

ایک رپورٹ کے مطابق خواتین کو مردوں کے مقابلے میں اپنے فگر کی بہت زیادہ فکر ستاتی ہے اور وہ وزن کم کرنے کے لئے قدرتی اور بے ضرر طریقوں کو چھوڑ کر راتوں رات ایک آئیڈل فگر پانے کے چکر میں رہتی ہیں۔

اسی چکر میں الٹی سیدھی ادویات اور سرجری کے زریعے موٹاپے سے نجات حاصل کرنا چاہتی ہیں۔

ڈچ سائسندانوں کی جانب سے کی جانے والی ریسرچ کے مطابق گیسٹرک بائی پاس کے زریعے موٹاپے سے نجات پانے والوں میں ساری زندگی کے لئے کھانے پینے اور دوسرے مسائل پیدا ہو جاتے ہیں۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ موٹاپے کو سرجری کے زریعے ختم کر نے والی ٹیکنالوجی روکس این وائی گیسٹرک بائی پاس بہت سے مسائل کا باعث بنتی ہے۔

اس آپریشن میں سب سے عام سرجری سلیو گیسٹریکٹومی ہے جس میں پیٹ کو ایک کیلے کے برابر کاٹ دیا جاتا ہے۔

گیسٹرک بائی پاس سے ہونے والے مسائل میں سب سے عام معدے کے مسائل،اگلنے،زیادہ سخت یا زیادہ نرم پاخانے اور پیٹ سے ہر وقت گڑگڑ کی آوازیں آنا شامل ہیں۔

اس کے علاوہ موٹے لوگوں میں عموما ذیابیطس کا خطرہ بھی پایا جاتا ہے جس کی وجہ سے سرجری دیگر مسائل پیدا کر سکتی ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ وزن کم کرنے کے لئے قدرتی اور بے ضرر طریقہ علاج اپنانا چائیے مثال کے طور پر مستقل مزاجی سے ورزش کا معمول اور صحت مند غذا کم مقدار میں استعمال کرنا سود مند ثابت ہوتا ہے۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *