سوشل میڈیا پر بچوں کی تصاویر،خطروں کو دعوت

سوشل میڈیا پر بچوں کی تصاویر،خطروں کو دعوت

نیویارک: ہم اکثر فیس بک پر بہت سے لوگوں کی فیملیز کی تصاویر جن میں ان کی زندگی کے خاص موقعوں جیسے شادی یا بچوں کی سالگرہ وغیرہ کی پوسٹ شئیر کی ہوتی ہیں دیکھتے ہیں۔

لیکن کیا یہ صیح ہے؟

ماہرین کا کہنا ہے کہ اپنی فیملی اور بچوں کی تصاویر سوشل میڈیا پر شئیر کرنا ان کے لئے زندگی کے کسی نہ کسی موڑ پر نقصان کا سبب بنتا ہے۔

اپنی فیملی کی تصاویر کی صورت میں آپ ایسے بہت سے لوگوں کو جو آپ کے خیر خواہ نہیں ڈیجیٹل معلومات فراہم کر رہے ہیں جس سے وہ لوگ فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔

انسان کی فطرت ہے کہ وہ ہر نئی چیز کو بلا سوچے سمجھے استعمال کرنا شروع کر دیتا ہے اور اس کے نقصانات پر توجہ نہیں دیتا۔

ایک رپورٹ کے مطابق والدین اہنے بچوں کے 5 سال تک کی عمر تک پہنچنے سے پہلے 1000 سے زیادہ تصاویر سوشل میڈیا پر شئیر کر چکے ہوتے ہیں۔

اس کے علاوہ والدین چاہتے ہیں کہ ان کے بچے کو زیادہ سے زیادہ لوگ دیکھیں پسند کریں،اس کے لئے وہ ان سے الٹی سیدھی حرکات کروا کر سوشل میڈیا اسٹار بنانے کی کوشش کرتے ہیں اور بچے ان کی توقعات پر پورا اترنے کی کوشش میں خود کو ذہنی مریض بنا لیتے ہیں۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ والدین بچوں کی تصاویر وغیرہ شائع کر کے ان کے لئے مستقبل میں مسائل پیدا کرنے کے اسباب مہیا کر رہے ہیں۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *