سکھ برادری کا 15 اگست کی تقریبات کا بائیکاٹ

سکھ برادری کا 15 اگست کی تقریبات کا بائیکاٹ

نیویارک:دنیا بھر کے سکھوں نے 15 اگست کو ہندوستان کی یوم آزادی کی تمام تقریبات کا بائیکاٹ کرنے کے علاوہ پنجاب کو خالصتان بنانے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ 15 اگست ہندو انتہا پسند قوم کا آزادی کا دن تو ہو سکتا ہے لیکن سکھوں کا نہیں ۔

دی نیوز ٹرائب کو موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق نیویارک میں مقیم سکھ کمیونٹی کے رہنما ایک پرہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے۔

نیویارک میں مقیم سکھ کیمونٹی کے رہنمائوں گُلدیپ سنگھ۔ چرن سنگھ م، بابا مکھن سنگھ ، حرجیت سنگھ نے  کہا ہے کہ ہندوستان ایک دہشت گرد ملک ہے اس ملک کی خفیہ ایجنسی را اپنے ہمسایہ ممالک میں دہشت گردی کی وارداتوں میں ملوث ہے ۔

سکھ رہنمائوں نے کہا کہ بین الاقوامی دہشت گرد تنظیم آئی ایس آئی ایس کے خفیہ طور پر راء کے ساتھ تعلقات ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ 15 اگست 1947ء ہندو انتہا پسندوں کی آزادی کا دن تو ہو سکتا ہے لیکن سکھوں کا نہیں ۔ سکھ ہندوستان سے اپنی آزادی چھین لیں گے اور خالصتان ضرور معرض وجود میں آئے گا ۔

سکھ کیمونٹی کے رہنما دلبیر سنگھ نے کہا کہ 15 اگست کو ہم ایک لاکھ سکھوں کے دستخطوں پر مشتمل ایک پیٹیشن امریکی صدر باراک اوباما کو بھیج رہے ہیں جس میں ہم امریکی حکام سے درخواست کرینگے کہ وہ بھارت کے خلاف ہماری آزادی کی تحریک کی حمایت کریں ۔

انہوں نے ایک سوال کے جواب میں بتایا کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوجی غنڈے کشمیریوں پر ناحق ظلم کے پہاڑ توڑ رہے ہیں ، ہم کشمیریوں کی آزادی کی جدوجہد کی حمایت کرتے ہیں ۔

انہوں نے پاکستان سمیت دیگر ممالک سے بھی درخواست کی کہ وہ سکھوں کی آزادی کے لئے ہماری مدد کریں اور ہمارے اوپر ہونے والے ہندو راشٹریہ کی جانب سے مظالم کے خلاف آواز بلند کریں ۔

ایک سوال کے جواب میں سکھ رہنمائوں نے کہا کہ پوری دنیا میں سکھ قوم 15 اگست کو یوم سیاہ کے طور پر منائے گی اور ہم دنیا پر واضح کر دینگے کہ ہندوستان میں ہندو غنڈے اقلیتوں کے ساتھ ظلم کے پہاڑ توڑ رہے ہیں۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *