گلن نے مغرب سے مداخلت کی اپیل کر دی

گلن نے  مغرب سے مداخلت کی اپیل کر دی

قاہرہ: ترکی میں پندرہ جولائی کی ناکام بغاوت کے ماسٹر مائنڈ قرار دیے جانے والے فتح اللہ گولن نے مغرب سے اپیل کی ہے کہ وہ ترکی میں اے کے پارٹی کی منتخب حکومت اور پہلے منتخب صدر رجب طیب اردوان کی حکومت گرا دیں۔

ترک بغاوت کے پس پردہ اہم فرد کے طور پر قرار دیے جانے والے فتح اللہ گولن نے یہ اپیل ایک مصری ٹیلیویژن چینل کے الغد کے ذریعے کی ہے۔

مصر میں صدر محمد مرسی کی منتخب حکومت گرا کر اقتدار پر قبضہ کرنے والے جنرل السیسی کے قریبی سمجھے جانے والے چینل کو انٹریو دیتے ہوئے گلن نے مغربی ممالک سے ترکی میں مداخلت کی اپیل کرتے ہوئے کہا ہے کہ ترکی کو خانہ جنگی کا شکار کر دیا گیا ہے۔ اس کیفیت کے خاتمہ کے لئے حکمراں جماعت انصاف و ترقی پسند پارٹی اور صدر اردوان سے جان چھڑائی جائے۔

یاد رہے کہ ترک وزیر انصاف باقر بوذدا نے انٹیلی جنس معلومات کی بنیاد پر کہا تھا کہ امریکا سے بے دخلی کی صورت میں مصرگلن کو پناہ دینے کے لئے تیار ہے۔

آمر جنرل سیسی کے ترتیب دیے گئے انتظامی ڈھانچے کے نائب وزیراعظم شریف  اسماعیل بھی یہ کہہ چکے ہیں کہ اگر پناہ کی درخواست کی گئی تو وہ اس پر غور کریں گے۔

سابق فتح لیڈر اور الغد ٹی وی کے مالک محمد زہلان کے بارے میں مشہور ہے کہ وہ متحدہ عرب امارات کے ساتھ میں قریبی تعلقات رکھتے ہیں۔ دوسری جانب ڈیوڈ ہیرسٹ کی جانب سے مڈل ایسٹ آئی میں انکشاف کیا گیا ہے کہ زہلان نے پندرہ جولائی کی بغاوت سے قبل ترکی میں دہشت گرد قرار دی گئی گلن تحریک کو بھاری رقم منتقل کی تھی۔

یاد رہے کہ پندرہ جولائی کی بغاوت کے موقع پر امریکی چینلز کے ساتھ ساتھ مصر اور متحدہ عرب امارات کے میڈیا نے بھی ایسی رپورٹس شائع اور نشر کی تھیں جن سے یہ محسوس ہوتا تھا کہ بغاوت کامیاب ہو گئی ہے۔

جب کہ مصر نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں ترک بغاوت کی مذمت کے لئے پیش کی جانے والی قرارداد بھی رکوائی تھی،جسے ترمیم کے بعد منظوری کے لئے پیش کیا گیا تو بھی مصری نمائندے نے اس پر اعتراض کیا تھا۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *