ترک صدر کا تاریخ ساز فیصلہ

ترک صدر کا تاریخ ساز فیصلہ

استنبول:ترکی کے منتخب صدر رجب طیب اردوان نے توہین صدر کے سلسلے میں زیر حراست ملزمان کو رہا کرنے کا حکم دے دیا ہے۔

دی نیوز ٹرائب ڈاٹ کام کوموصول اطلاعات کے مطابق ترکی کے صدر نے کہا ہے کہ وہ ایسے تمام کام واپس لے رہے ہیں جو ان کی توہیں کے سلسلے میں درج کیے گئے ہیں۔

اُن کا کہنا تھا کہ یہ خیر سگالی کے اقدامات میں سے ایک ہے,ترک صدر کا یہ بیان اور رویہ تاریخ میں سنہری حروف میں لکھے جانے کے قابل ہے۔

ترک صدر کا کہنا تھا کہ وہ 15 جولائی کی شب ملک میں ہونے والی بغاوت کے بعد عوام کی یکجہتی سے بہت متاثر ہوئے ہیں۔

بغاوت کے بعد دی جانے والی کاروائیوں پر تنقید کرنے والوں کے بارے میں ترک صدر کا کہنا تھا وہ اپنے کام سے کام رکھیں۔

یاد رہے ترکی میں تقریباً دو ہزار افراد پر ترکی کے صدر کی توہین کے الزام میں مقدمات قائم کیے گئے تھے۔

ترکی کی حکومت کی طرف سے بغاوت کی حالیہ ناکام کوشش کا الزام امریکہ میں مقیم ترک مذہبی شخصیت فتح اللہ گولن پر عائد کیا گیا تھا۔

فتح اللہ گلن کا کہنا ہے کہ اُن کا بغاوت سے کوئی تعلق نہیں اور خود پر لگائے گئے الزامات کی وہ تردید کر چکے ہیں۔

ترکی میں ہونے والی ناکام بغاوت پر 3 ماہ کی ایمرجنسی نافذ کر کے بڑی کاروائیوں کا سلسلہ شروع کر دیا گیا ہے جس میں مختلف جنرل،فوج کے سپاہیوں اور صحافیوں کے خلاف بھی کاروائی کی گئی۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *