سعودی عرب اسرائیل کی جانب جھکنے لگا

سعودی عرب اسرائیل کی جانب جھکنے لگا

واشنگٹن:اسرائیل کی جاب سے غزہ پر کی جانے والی بمباری پر سعودیہ خاموش رہے گا اور جب اسرائیل حماس کے خلاف کاروائی مکمل کر لے گا پھر سعودی عرب غزہ کی تعمیر نو کے لئے فنڈز جاری کرے گا۔

دی نیوز ٹرائب کو موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق اسرائیل اور سعودیہ کے مابین ہونے والے اس معاہدے نے سعودی عرب اور اسرائیل کی بڑھتی قربتوں کی قلعی کھول دی ہے۔

سعودی عرب کے جنرل انور ایشکی اور اسرائیل حکام کے درمیان اہم ملاقاتیں ہوئی ہیں تاہم دونوں ممالک کے درمیان سفارتی تعلقات نہ ہونے کی وجہ سے ان ملاقاتوں کو خصوصی اہمیت دی جا رہی ہے۔

ذرائع کے مطابق اسرائل اور سعودی عرب کے درمیان خفیہ تعلقات کئی عرصے سے قائم تھے تاہم دونوں ممالک ان تعلقات کو خفیہ رکھ رہے تھے۔

بتایا جا رہا ہے کہ اسرائل کی جانب سے غزہ بمباری سے قبل اسرائیل،سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات میں اعلیٰ سطح کی ملاقاتیں ہوئیں جس میں معاہدہ کیا گیا کہ اسرائیل کی غزہ پر بمباری پر سعودی عرب خاموش رہے گا جب اسرائیل حماس کے خلاف اپنا آپریشن مکمل کر لے گا تو سعودیہ غزہ کی تعمیر نو کے لئے فنڈز جاری کرے گا۔

مغربی ذرائع ابلاغ کے مطابق سامنے آنے والی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ مصری آرمی چیف جنرل سیسی کے بارے میں بیان دیتے ہوئے سعودی وزیر نے کہا تھا کہ ہم اخوان المسملون حکومت پر اسرائیل کو ترجیح دیتے ہیں۔

مغربی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب اسرائیل کے قریب آنا چاہتا ہے اور ہم اس کو واضح طور پر محسوس کرتے ہیں جبکہ ایسا پہلی بار نہیں ہو رہا ہے۔

رپورٹ کے مطابق ایران کے بارے میں پائے جانے والے خدشات پر اسرائیل اور سعودی عرب کے درمیان قربتوں میں اضافہ ہوا ہے اور دنیا کے دیگر اسلامی ممالک کے اسرئیل سے اختلافات کے باوجود سعودیہ اسرائیل کی جانب جھکتا چلا جا رہا ہے۔

ویب ڈیسک

یہ پاکستان ٹرائب کا آفیشل ویب ڈیسک اکاؤنٹ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *